Buzcorner
right way » blog » کورونا وائرس کی وجہ سے سرجیکل ماسک کی قلت

کورونا وائرس کی وجہ سے سرجیکل ماسک کی قلت

چین میں کورونا وائرس کی وجہ سے درآمد کی جانے والی مختلف اشیاء روک دی گئی ہیں جن میں سرجیکل ماسک بھی شامل ہیں۔ چین میں نمودار ہونے والا کرونا وائرس دنیا کے بیس ممالک میں دہشت کی علامت بن چکا ہے۔

کرونا وائرس کی وجہ سے درآمد کی جانے والی مختلف اشیاء روک دی گئی ہیں جن میں سرجیکل ماسک بھی شامل ہیں۔ یہ ماسک ٹشو پیپر سے تیا ر کیے جاتے ہیں۔ دسمبر تک سرجیکل ماسک کا ڈبہ 200 روپے میں ملتا تھا جو کہ اب ہول سیل مارکیٹ میں 700 روپے میں بھی نہیں مل رہا۔ تاہم بعض ہول سیلر کے پاس پرانا سٹاک موجود ہے جو کہ ایک ڈبہ ایک ہزار تک فروخت کر رہے ہیں۔ ہول سیلر کا کہنا ہے کہ سرجیکل ماسک چین سے درآمد کیے جاتے تھے۔ کورونا وائرس کی وجہ سے ماسک سمیت دیگر اشیاء کی ترسیل عارضی طور پر روک دی گئی ہے۔ اس لیے یہ ماسک مارکیٹ میں اب دستیاب نہیں ہیں۔ ہول سیل مارکیٹ میں بعض ڈیلروں کے پاس پرانا سٹاک موجود ہے لیکن دکان دار اس وجہ سے خریدنے سے قاصر ہیں کیوں کہ ان پر جراثیم کش سپرے ہوا ہے یا نہیں۔

سرجیکل ماسک

اس تذبذب کی وجہ سے دکان دار ہول سیل مارکیٹ سے ماسک نہیں اٹھا رہے ہیں۔ تاہم بعض لوکل کمپنیوں نے اس کا فائدہ اٹھاتے ہوئے کپڑے کے ماسک متعارف کروائے ہیں۔ ایک ماسک کی قیمت تقریبا پچاس روپے ہے۔ دوسری جانب بعض سرکاری ہسپتالوں میں بھی سرجیکل ماسک اور دستانوں کی قلت ہو گئی ہے۔

Read This:  کم عمر بچیوں سے نازیبا حرکات کرنے والا باریش شخص گرفتار

Share

Add comment