Buzcorner
right way » blog » سوشل میڈیا کمپنیوں کا پاکستانی قوانین ماننے سے انکار

سوشل میڈیا کمپنیوں کا پاکستانی قوانین ماننے سے انکار

سوشل میڈیا کمپنیوں کا پاکستانی قوانین ماننے سے انکار اور کاروبار بند کرنے کی دھمکی۔

حکومت نے سوشل میڈیا رولز پر مشاورت کے لیے کمیٹی بنا دی۔ پی ٹی اے چئیرمین عامر عظیم چئیرمین ہوں گے۔ تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا کمپنیوں گوگل فیس بک اور ٹوئٹر نے پاکستانی قوانین ماننے سے انکار کرتے ہوۓ کاروبار بند کرنے کی دھمکی دیدی دوسری جانب حکومت نے سوشل میڈیا رولز پر مشاورت کے لیے کمیٹی قائم کر دی۔ پی ٹی اے کے چئیرمین عامر عظیم چئیرمین ہوں گے۔ ایشیائی انٹرنیٹ کولیشن گروپ نے سوشل میڈیا ریگولیشن کے حوالے سے وزیر اعظم پاکستان کو خط لکھ دیا جس کے متن میں کہا گیا ہے کہ پاکستان میں سوشل میڈیا سے متعلق نئے قوانین پر عمل اے آئی سی کے لیے مشکل ہے گوگل فیس بک اور ٹوئٹر سروس بند ہونے سے 70 ملین صارفین متاثر ہوں گے۔

social median by buzcorner

ان قوانین سے عام صرف اور کاروباری حضرات بھی متاثر ہوں گے۔ نیو یارک ٹائمز کے مطابق ان کی عوامی بغاوت مقامی شہری آزادیوں سے متعلق مقدمات نے حکومت کو پیچھے ہٹنے پر مجبور کر دیا ہے۔ قانون موجود رہے گا لیکن پاکستانی حکام نے رواں ہفتے قواعد و ضوابط کا جائزہ لینے اور ٹیکنالوجی کمپنیوں اور سول سوسائٹی کے تمام متعلقہ طبقات کے ساتھ ایک وسیع البنیاد مشاورتی عمل شروع کرنے کا وعدہ کیا۔ پاکستان میں فیس بک گوگل ٹوئٹر اور دیگر ٹیکنالوجی کمپنیوں کی متحدہ مزاحمت انتہائی غیر معمولی ہے۔

کمپنیاں اکثر اس قسم کے قواعد و ضوابط پر احتجاج کرتی ہیں لیکن وہ شاید ہی کبھی کسی ملک کو چھوڑنے کی دھکمی دیتی ہیں۔ دوسری جانب سوشل میڈیا سے متعلق مجوزہ قوانین پر مشاورت کے لیے وفاقی حکومت نےکمیٹی تشکیل دے دی ہے۔ چئیرمین پاکستان ٹیلی کمیونیکیشن اتھارٹی عامر عظیم باجوہ کمیٹی کے چئیرمین مقرر کر دیے گئے ہیں۔ اعلامیہ کےمطابق کمیٹی سول سوسائٹی اور ٹیکنالوجی کی کمپنیوں سے قوانین پر مشاورت کرے گی سوشل میڈیا قوانین پر مشاورت کا عمل 2 ماہ میں مکمل کیا جاۓ گا۔ سوشل میڈیا سے متعلق مشاورت کمیٹی کے ارکان میں وفاقی وزیر براۓ انسانی حقوق شیریں مزاری بیرسٹر علی ظفر ڈاکٹر ارسلان خالد اور ایڈیشنل سیکرٹری وزارت انفارمیشن ٹیکنالوجہ شامل ہیں۔ وفاقی حکومت کی جانب سے سوشل میڈیا کو کنٹرول کرنے کے لیے بناۓ گئے قوانین کی کابینہ نے بھی منظوری دی ہے جس کے مطابق نئے قوانین کے تحت سماجی رابطوں کے تمام عالمی میڈیا کمپنیوں کی تین ماہ میں پاکستان کے اندر رجسٹریشن لازمی قرار دی گئی ہے۔

Share

2 comments